پاک بھارت مذاکرات اور کشمیر

پاک بھارت مذاکرات اور کشمیر

رضوان عطا

1991ء سے منائے جانے والے ’یوم یکجہتی کشمیر‘ سے ایک روز قبل وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے تصدیق کی کہ بھارت نے پاکستان کو خارجہ سیکرٹریز کی سطح پر بات چیت شروع کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔ اس سے قبل دفتر خارجہ کے ترجمان نے ایک بریفنگ میں روابط کی بحالی کے لیے ’کچھ تجاویز‘ کے موصول ہونے کی تصدیق تو کی لیکن ان کی تفصیل بتانے سے اس بنیاد پر انکار کیا کہ فی الوقت یہ مناسب نہیں۔ اس موقع پر انہوں نے پاکستان کے روایتی مؤقف کو دہراتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی مرضی سے ہونا چاہیے اور یہ کہ کشمیری عوام کی حمایت جاری رکھی جائے گی۔ پاکستان اور بھارت کے مابین مذاکرات کی بحالی کی خبروں کے ساتھ ساتھ کشمیر کا معاملہ بھی اُبھر کر سامنے آ گیا ہے، جس کی وجہ دونوں ممالک میں پیدا ہونے والی صورت حال کے ساتھ ساتھ بھارتی کشمیر میں ہونے والے احتجاج بھی ہیں۔ علاوہ ازیں مفاہت کے لیے عالمی دباؤ نے بھی کردار ادا کیا ہے۔ پڑھنا جاری رکھیں