“۔۔۔تو پھر انہیں کیوں مارا گیا”

ڈاکٹر علی حیدر اور مرتضیٰ حیدر کا قتل

۔۔۔تو پھر انہیں کیوں مارا گیا”

رضوان عطا

19 فروری کو لاہور میں ایک پچاسی سالہ باپ اور اسّی سالہ ماں نے اپنے بیٹے پروفیسر ڈاکٹر علی حیدر اور پوتے مرتضیٰ حیدر کو قبروں میں اترتے دیکھا۔ ایک روز قبل پروفیسر ڈاکٹر علی حیدر پر ایف سی کالج، لاہور کے قریب اس وقت فائرنگ کی گئی جب وہ ساتویں جماعت کے طالب علم اپنے بیٹے کے ساتھ ایچی سن کالج جا رہے تھے۔ بیٹے مرتضیٰ حیدر کو سر میں گولی لگی اور اس نے ہسپتال پہنچے سے پہلے ہی دم توڑ دیا جبکہ علی حیدر کو لگنے والی پانچ سے چھ گولیاں فوری موت کا باعث بنیں۔ پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements