کرد استاد کے لیے ایرانی سپریم کورٹ نے سزائے موت برقرار رکھی

<!– @page { size: 8.5in 11in; margin: 0.79in } P { margin-bottom: 0.08in } –>

گیارہ جولائی 2008ء کو ایران کی سپریم کورٹ نے کرد استاد، صحافی اور شہری آزادیوں کے لیے کام کرنے والے کارکن فرزاد کمانگر کی سزائے موت کو برقرار رکھا۔ ان پر کردستان ورکرز پارٹی کا رکن ہونے کا الزام ہے۔ پڑھنا جاری رکھیں

Advertisements